آنکھوں کی حفاظت

آنکھیں قدرت کا انمول تحفہ ہیں ، لیکن اکثر لوگ ان کی صحت مندی کی طرف توجہ نہیں دیتے، جس کی وجہ سے ان کی آنکھیں جلد خراب ہوجاتی ہیں۔ آنکھیں بھی جسم کے دوسرے اعضاءکی طرح بھر پور توجہ چاہتی ہیں۔ ان کی مناسب دیکھ بھال سے آپ نہ صرف اپنی بینائی درست رکھ سکتی ہیں، بلکہ اس سے اعصابی راحت بھی ملتی ہے۔ ذیل کی سطور میں آنکھوں کے حوالے سے چند کار آمد چیزوں کا ذکرکیاجارہا ہے، آزما کر دیکھئے، آپ نہ صرف اپنی بینائی میں نمایاں فرق محسوس کریں گی، بلکہآپکی آنکھیں اجلی اور روشن ہوجائیں گی

کھانا کھاکر آنکھوں پر گیلا کپڑا پھیرنا، بینائی کے لئے مفید رہتا ہے ۔

شوقیہ عینک لگانے اور ناک کے بال اکھاڑنے سے گریز کریں، اس سے نظر کمزور ہوجاتی ہے۔

مرچوں اور کھٹائی کا زیادہ استعمال آنکھوں کے لیے نقصان دہ ہوتا ہے، اس سے نظر کمزور ہوجاتی ہے۔

آنکھیں جھکائے بغیر خالی گھڑے میں کچھ دیر دیکھتی رہیں، یہ آنکھوں کی بہترین ورزش ہے۔

سرپر بار بار کنگھی کرنے کی عادت آنکھوں کو صحت مند رکھنے میں معاون ثابت ہوتی ہے۔

زیادہ دیر تک تیز دھوپ میں بیٹھ کر پڑھنے اور سینے پرونے سے نظر خراب ہوجاتی ہے۔

بالوں کو تیز گرم پانی سے دھونا نظر پر اثر انداز ہوسکتاہے ۔ ہمیشہ نیم گرم یا ٹھنڈے پانی سے بال دھوئیں۔

سورج کی طرف براہ راست دیکھنا آنکھوں کے لئے نقصان دہ ہے، البتہ چاند کی طرف گھنٹہ نصف گھنٹہ دیکھنا بینائی تیز کرتا ہے۔

ہر صبح آنکھیں اور چہرہ باسی ٹھنڈے پانی سے دھوئیں،اس سے بینائی بڑھے گی اور کیل مہا سے بھی ختم ہوں گے۔

پشت کے بل لیٹ کر یا تکیہ لگا کر پڑھنا بینائی کو تباہ کر دیتاہے۔

کھیرے کے پتلے پتلے قتلے کاٹ کر آنکھوں پر پانچ سے دس منٹ رکھیں۔ تھوڑی دیر بعد قتلے ہٹا کر آنکھیں سادہ پانی سے دھولیں۔ آنکھوں کی چمک بڑھانے کے لئے یہ نسخہ بہترین ہے۔

صبح کے وقت عرق گلاب کے چھینٹے آنکھوں پر مارنے سے ان کی خوبصورتی میں اضافہ ہوتاہے۔

خالص شہد آنکھوں میں لگا نے سے نظر تیز ہوتی ہے ۔

پانی ابال کر ٹھنڈا کرلیں، اس میں نمک ڈال کر شیشے کی بوتل میں محفوظ کرلیں، روزانہ اس پانی سے آنکھیں دھوئیں۔

نیم گرم دودھ میں روئی بھگوکر چند منٹ آنکھوں پر رکھیں، پھر ٹھنڈے پانی کے چھینٹے ماریں، آنکھوں میں قدرتی چمک اور خوبصورتی آجائے گی۔

آنکھوں کو سکون اور آرام پہنچانے کے لئے سیدھے بیٹھ جائیں، سر کو ہلائے بغیر اوپر کی طرف دیکھیں، پھر انتہائی دائیں اور بائیں طرف۔

اسی طرح پتلیوں کو چاروں جانب گھمائیں، یہ ورزش نہ صرف آنکھوں کے پٹھوں کو آرام دے گی، بلکہ بینائی بھی تیز ہوگی۔ یہ ورزش شروع میں ایک سے دو منٹ کریں، بعد میں دورانیہ بڑھائیں۔

کام کے دوران تھکن محسوس کریں توکچھ دیر کے لئے دونوں ہتھیلیوں سے آنکھوں کو اس قدر ڈھانپ لیں کہ گھپ اندھیرا ہو جائے۔ چند لمحوں کے لئے اس گھپ اندھیرے میں غور سے دیکھیں، اس سے آنکھوں کے پٹھوں اور اعصاب کو بھی راحت ملے گی۔

آنکھوں کی حفاظت اور نظر کی بہتری کے لیے درج ذیل نسخہ استعمال کریں:

بادام پندرہ عدد، سونف دو چمچ، کالی مرچ تین عدد، نہار منہ دودھ کے گلاس کے ہمراہ چبا کر کھا لیں۔

ہر نماز کے بعد درج ذیل آیت کریمہ تین مرتبہ پڑھ کر دائیں ہاتھ کی شہادت کی انگلی پر پھونک لیں اور دونوں آنکھوں پر پھیر لیں۔

فکشفنا عنک غطائک فبصرک الیوم حدید

اس آیت کی برکت سے نظر کی کمزوری ٹھیک ہوجائے گی، ان شاء اللہ العزیز۔

قرآن کریم کی تلاوت کو اپنا معمول بنائیں، تلاوت قرآن کریم کی برکت سے نظر ٹھیک رہتی ہے اورجو کمی ہوچکی ہو وہ بھی دور ہوجاتی ہے۔

اپنی بہنوں سے گذارش ہے کہ ان ہدایات پر خود بھی عمل پیرا ہوں اور گھر کے دیگر افراد کو بھی اس پر آمادہ کریں۔ یاد رکھیں آنکھوں سے ہی اس جہاں کی بوقلمونیوں کا لطف اٹھایا جاسکتا ہے،اللہ تعالی کے اس قیمتی تحفے کے قدر کریں۔

خصوصا چھوٹے بہن بھائیوں اور بچوں کی اس سلسلے میں راہنمائی کریں اور اپنی نگرانی میں درج بالا ہدایات پر ان سے عمل کروائیں۔ اور ہاں ۔۔۔ایک ضروری بات۔۔۔ مجھے اپنی دعاؤں میں ہرگز نہ بھولئے گا

تبصرے

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں