موبائل ریپئر نگ سافٹ ویئر متعارف

تصورکریں وہ کتنا تکلیف دہ لمحہ ہو گاکہ آپ کے ہاتھ میں آپ کا موبائل فون ہو اور اچانک آپ کے ہاتھ سے وہ موبائل چھوٹ کر فرش پر گر جائے اور موبائل کی سکرین کرچی کرچی ہو جائے ۔ موبائل گرنے کی جتنی تکلیف ہوتی ہے تو اس نقصان کا بھی اتنا ہی دکھ ہوتا ہے اب یہ کوئی تعجب کی بات نہیں رہی ہے کہ موبائل سیل فونز کی خرابی اور ٹھیک کروانے کا کاروبار منافع بخش بزنس بن چکا ہےاور صرف امریکہ میں یہ کاروبار 4ارب ڈالر سے تجاوز کر گیا ہے۔ایک پاکستانی سٹارٹ اپ کمپنی ریپیئرڈیسک نے اس میدان میں اپنی سرگرمیاں شروع کر دی ہیں ۔ ریپیئرڈیسک نے موبائل فون ریپئر شاپس کیلئے ایک سافٹ ویئر متعارف کروایا ہے جو موبائل کی خرابی دور کرنےکیلئے معلومات فراہم کرتا ہے بلکہ انوینٹری بھی بناتا ہے اور کسٹمر اور سٹاف کے درمیان رابطوں کو بھی منظم کرتا ہے۔ اس سٹارٹ اپ کمپنی ریپیئرڈیسک کے چیف ایگزیکٹو آفیسر عثمان بٹ ہیں ،انہوں نے2015 ء میں بزنس اور انفارمیشن ٹیکنالوجی میں بیچلر کی ڈگری حاصل کی، ابتدائی طور پر وہ پاکستان میں ایک ویب ڈیزائن کاکاروبار چلا رہے تھے اسی دوران انہوں نے آسٹریلیامیں مقیم اپنے بھائی سے متاثر ہو کر پاکستان میں بھی موبائل ریپیئرنگ کے کاروبار کا آغاز کیا۔ موبائل کی ریپیئرنگ اور ریٹیل کی بارے میں آگاہی کے لئے انہوں نے ابتداء میں موبائل کی ریپیئرنگ مارکیٹ کے بارے میں مختلف تجزیاتی سروے بھی کئے ان تمام کاوشوں سے انہیں سافٹ ویئر کو ڈیزائن کرنے کی ڈیمانڈ سے متعلقہ ٹیکنالوجی کو سمجھنے میں مدد ملی۔

عثمان بٹ نے لمز یونیورسٹی کی معاونت سےاپریل 2015 ءمیں اپنے پراجیکٹ کا آغاز کیا۔ اس دوران عثمان بٹ کو احساس ہوا کہ ان کی خدمات سے 50 سے 60 فیصد صارفین کو مطمئن ہیں، تب انہوں نے اپنےسافٹ وئیر کی تنظیم نو کے بعد اس سال جولائی میں کسٹمرز کےلئے ایک نیا ورژن متعارف کروایا، اگرچہ ابتداء میں انہیں کوئی خاطر خواہ کامیابی نہیں ملی اور پہلے ماہ صرف 6 کسٹمرز سے معاہدے ہو سکے ،۔ عثمان کے سٹارٹ اپ نے حقیقی طور پر جولائی 2016ء میں اس وقت ابتدائی کامیابی حاصل کی کہ جب امریکہ میں سمارٹ فون اور ٹیبلیٹ مرمت کی ایک ڈسٹری بیوشن کمپنی ری ویمپ کی طرف سےفنڈنگ موصول ہوئی ،INC Magazine کی رپورٹ کے مطابق ری ویمپ الیکٹرانکس کا شمار امریکہ کی 50 تیزی سے ترقی کرنے والی کمپینوں میں ہوتا ہے بعدازاں ری ویمپ کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر اننت ہندا ریپیر ڈیسک کے شریک بانی کے طور پر شامل ہو گئے تاکہ اس کمپنی کے کاروبار کو توسیع دی جاسکے اور اس کی مزید کامیابی کے لئے حکمت عملی ترتیب دی جا سکے، پاکستان کے سب سے بڑے بزنس ایکسلریٹر پلان نائن میں شمولیت کے بعد اس کمپنی نے تیزی سے کامیابیاں حاصل کرنا شروع کر دیں اور ریپئیر ڈیسک میں 50 کے قریب نئی کلائنٹس شاپس کا اضافہ ہوا۔ آپریشن میں ہونے کے صرف 15 ماہ کے اندر اندر ان کے کاروبار کو دنیا بھر میں 200 سے زائد مرمت مراکز کو وسعت دی ہے ان کے سافٹ ویئرز اس وقت 20 سے زائد ممالک میں چل رہاہے۔ان کے گاہکوں کی اکثریت امریکہ، آسٹریلیا اور برطانیہ میں مقیم ہے۔ انہوں نے کہا کہ فی الحال پاکستان میں ہمارے پاس کسٹمرز نہیں ہیں تاہم یہاں بہت بڑی مارکیٹ موجود ہے ۔جیسے کہ کیو موبائل جیسی بڑی کمپنی کے کا ریٹیل کا بہت بڑا نیٹ ورک موجود ہے لیکن وہ بھی اپنا سب کام پیپر پر کر رہے ہیں ۔ابھی صرف ان کو اپنے سافٹ وئیر کے بارے میں آگاہی دینا باقی ہے۔

حال ہی میں ریپئر ڈیسک نے ایک اور کمپنی فکس فائنڈر ڈاٹ کام سے معاہدہ کیا ہے جس کے بعد موبائل ریپرنگ میں یہ دونوں کمپنیاں شراکت داری معاہدے کے تحت ایک دوسرے سے تعاون کریں گی۔ رواں ماہ کے دوران ریپئر ڈیسک اپنے تکنیکی ماہرین کے لئے موبائل ایپلی کیشن کا ایک بِیٹا ورژن متعارف کروائےگا۔ جو ویب سائٹ کے ذریعے ملنے والی تمام شکایات اپنی اس ریپئر ڈیسک ایپلی کیشن کو منتقل کر دے گا جس کے بعد اس کی انوائس اور ٹکٹ جاری کر دی جائے گی -اس ایپلی کیشن کے ذریعے کریڈٹ کارڈ اور پے پال کی ادائیگیاں ممکن ہو سکیں گی۔

بشکریہ
ایم آئی ٹیکنالوجی ریویو پاکستان
ماہ رخ سرور

تبصرے

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں