گورنمنٹ ڈگری کالج فتح جنگ کے پہلے پرنسپل پروفیسر سید اسلم کاظمی

پروفیسر سید محمد اسلم کاظمی ۳ اگست ۱۹۳۳ کو انڈیا میں  پیدا ہوےٗ۔ ۱۹۴۷ء میں پاکستان ہجرت کی اور عجیب قسمت ہے کہ ریٹایٗرڈ منٹ کے بعد احسن اور محسن کے ساتھ ہجرت کرکے امریکہ اور کینیڈ ا چلے گےٗ۔ جہاں ان کی ساری فیملی سیٹل ہے اور اسی مٹی میں آسودہ خاک ہیں۔

اٹک میں جنوری ۱۹۷۵ء کو وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو کا جلسہ ہوا جس میں انہوں نے بڑے دلچسب انداز میں فتح جنگ کو فتح گنج کہتے ہوےٗ انٹر کالج کی منظوری دی۔ کالج کا آغاز بلدیہ اور تحصیل کے دفتر کے پاس واقع پرایٗمری سکول میں ہوا۔یہ پرایٗمری سکول ۱۹۴۷ء سے پہلے کسی ہندو کی ملکیت تھا۔ ۱۹۶۴ء میں پرایٗمری سکول کی نیٗ عمارت بنی جس کا افتتاح مشہور زمانہ ڈپٹی کمشنر اٹک سید خالد محمود نے کیا ۔غالبا اس وقت چیٗرمین حکیم سید محمد اعظم تھے۔اس پرایٗمری سکول کے ہیڈماسٹر فتح جنگ کی ایک مایہ ناز شخصیت ، استادوں کے استا د جناب قاضی محمد دین بشارت تھے۔وہ ان کی نوکری کے آخری سال تھے۔بڑی قدآور شخصیت ، دراز قد، اونچا شملہ باندھے ہوتے۔ سردیوں میں اچکن اور گرمیوں میں ٹھنڈ ا کوٹ، ہاتھ میں بڑا خوبصورت کھونڈی(عصا) ہوتی اور پاوٗں میں خوبصورت سرخ گرگابی جوتے ہوتے۔

ان کا نہایت اعلی ادبی ذوق تھا۔ان کے سبب بچوں کو فارسی اور اردو کے اشعار ازبر ہوتے۔اسی زمانے میں ایک لڑکے نے فیض احمد فیض

گلوں میں رنگ بھرے باد نوبہار چلے

ترنم سے گاییٗ تو بہت خوش ہوےٗ۔ ایک بچے کو انہوں نے طارق کی دعا یاد کراییٗ جو آج بھی ذہنوں میں گونج رہی ہے۔

 ہرملک ملک ما است کہ ملک خداےٗ ماست

پھر یہیں کالج کے دور میں محمد اسلم کاظمی آگےٗ جنہوں نے اس کالج کی بنیاد رکھی ۔ بعد میں علاقہ گھرالہ میں سردار عتیق احمد خان نے سو کنال زمین عطیہ کی ۔ جہاں اب گورنمنٹ ڈگری کالج کی عمارت قایٗم ہے۔ اسی پرایٗمری سکول میں گرلز کالج کا آ غاز ہوا ۔ بعد ازاں جس میں عزیز احمد خان صاحب کی فیملی نے زمین عطیہ کی اور جہاں گرلز ڈگری کالج فتح جنگ قایٗ٘م ہے۔ اب اس عمارت میں پرایٗمری سکول قایٗم ہوگیا ہے۔

موجودہ ڈگری کالج میں فتح جنگ کے پروفیسر لال حسین شاہ مرحوم اور پروفیسر ظہیر احمد مرحوم پرنسپل رہے۔

اسی کالج میں ایک اور بزرگ شخصیت محمد صدیق صاحب بھی پروفیسر رہے۔ اب موجودہ پرنسپل ایک بزرگ اور قابل احترام ہستی پروفیسر تنویر احمد شاہ صاحب ہیں۔

آپ کا نام محکمہ تعلیم میں آج بھی زندہ و تابندہ ہے لیکن فتح جنگ کی تاریخ میں آپ کا نام ہمیشہ زندہ رہے گا کیونکہ پروفیسر محمد اسلم کاظمی صاحب کا گورنمنٹ ڈگری کالج فتح جنگ کے قیام میں ایک بہت اہم کردار ہے۔

آپ نے گورنمنٹ بوایٗز ڈگری کالج فتح جنگ کی ۱۹۷۵ ء میں بنیاد رکھی تھی۔ جوکہ فتح جنگ سے ایک کلومیٹر کے فاصلے پر کوہاٹ روڈ پر جہازوں والے گراونڈ کے ساتھ واقع ہے۔ اس کالج کے لیے زمین سردارعتیق خان نے وقف کی تھی۔

پروفیسر سید محمد اسلم کاظمی نے ایک بااصول زندگی گزاری تھی۔

پروفیسر سید محمد اسلم کاظمی کے والد کا نام سید محمد سالم کاظمی تھا ۔ پروفسیر صاحب کے دوصاحبزادے ہیں۔ جن میں سے سید محمد محسن کاظمی آج کل نیویارک امریکہ جبکہ سید محمد احسن کاظمی قطر میں بسلسلہ روزگار مقیم ہیں۔

پروفیسر سید محمد اسلم کاظمی ۱۱ میٗ ۲۰۱۳ء کو فوت ہوےٗ۔

آپ کا نام فتح جنگ کے تعلیمی حلقوں میں ہمیشہ زندہ رہے گا اور کالج کی صورت میں ایک تعلیمی ادارے کے لیے آپ کی کوششوں کو ہمیشہ سراہا جاےٗ گا

downloaddownload (1)

download (2)

تبصرے

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں