فلائٹ لیفٹیننٹ غلام مرتضٰی ملک (شہید) تمغہ جرات

فلائٹ لیفٹیننٹ غلام مرتضٰی ملک 5 نومبر 1941ء کو راولپنڈی میں پیدا ہوئے۔ 30جنوری 1966ء کو آپریشنل نیویگیٹر کے طور پر انہوں نے پاک فضائیہ میں کمیشن خاصل کیا۔
شروع شروع میں انہوں نے سی ون تھرٹی طیارہ اڑایا اور بعد میں انہیں بی-ففٹی سیون بمبار طیارے کی پرواز پر معمور کر دیا گیا۔ ء کی پاک بھارت جنگ کے دوران وہ نمبرسات سکواڈرن کی پروازوں کی ڈیوٹی سرانجام دے رہے تھے جو کہ میانوالی کی فارورڈ آپریٹنگ بیس میں تعینات تھی۔
انہوں نے پرجوش انداز میں دشمن کے علاقوں کے اندر حملے کی منصوبہ بندی میں حصہ لیا تھا اور اپنے ساتھیوں کے لیے حوصلہ افزائی کا ذریعہ بھی تھے۔
فلائٹ لیفٹیننٹ ملک ایک قابل اور تجربہ کار نیویگیٹر تھے۔ وہ سکواڈرن کے ایک فعال رکن تھے اور ہمیشہ جوش و جذبے کا مظاہرہ کرتے تھے انہوں نے اپنی ذاتی حفاظت کو مکمل طور پر نظر انداز کر کے بھارت کے سب سے بہترین دفاعی اڈووں پر دو کامیاب مشنز میں حصہ لیا اور ان مشنز کے دوران بڑی بہادری اور جرات کا مظاہرہ کیا۔ 5 دسمبر 1971ء کو نیویگیٹر کے طور پر انہیں امرتسر کے ہوائی اڈے پر بمباری کے مشن کے لیے بھیجا گیا وہ اس مشن سے واپس آنے میں ناکام رہے اور بعد میں سرکاری طور پر انہیں لاپتہ قرار دے دیا گیا۔

news_detailr

تبصرے

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں