فتح جنگ میں راستے، ہوٹلز، پٹرول پمپ بند، شہریوں کو مشکلات کا سامنا

نیوز رپورٹر : صداقت مٹھو

فٹح جنگ اسلام آباد دھرنے کو روکنے کے لیے حکومت نے فتح جنگ سے راولپنڈی، اسلام آباد جانے والے تمام راستے کنٹینر کگا کر بند کر دیئے۔ سی این جی اسٹیشن، پٹرول پمپ اور کئی ہوٹل بھی بند، کاروبار زندگی مفلوج ہو کر رہ گیا۔ انتظامیہ نے انتظامیہ نے دن گیارہ بجے اچانک ریلوے پھاٹک بند کر کے پولیس کی بھاری نفری تعینات کردی صبح سکول گئے ہوئے طلباء طالبات سڑکوں پر ذلیل ہوتے رہے۔
بچے گھروں میں نہ پہنچے تو والدین سراپا احتجاج بن گئے۔ دھرنا اسلام آباد میں ہو رہا ہے مقامی لوگوں کا کیا قصور ہے۔
والدین حلقوں نے راستے بند کرنے کی شدید مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ (ن) لیگی حکومت خود لوگوں کو متنفر کر کے عمران خان کی طرف ریفر کر رہی ہے فتح جنگ اگلے دو دن بند رہنے کا امکان، حطار، قطبال، گڑھی حسو خان، باہتر موڑ سمیت کئی آبادیوں کو فتح جنگ شہر سے رابطہ منقطع ہو کر رہ گیا۔ اشیائے خوردنی کی قلت کا بھی امکان ہے۔
راستوں کی بندش سے مسافروں اور مقامی لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ایمبولینس کے لیے بھی کوئی رعایت نہیں تھی ریلوے پھاٹک کے علاوہ شاہ پور ڈیم کے پل کو بھی کنٹینر کگا لر بند کر دیا گیا، گاڑیوں کی میلوں لمبی لائینں لگ گئی ہیں مسافر خواتین، بچے اور بوڑھے پیدل چلنے پر مجبور ہیں۔
پولیس زبردستی مسافر گاڑیوں سے سواریاں اتار کر انہیں پیدل چلنے کا مشورہ دیتے رہے، رکاوٹوں کو کامیاب بنانے کے لیے لاہور سے دو ہزار سے ذائد پولیس اہلکار فتح جنگ پہنچ گئے۔
شہری حلقوں نے حکومتی اقدامات کی شدید مخالفت کرتے ہوئے فوری طور راستے کھولنے کا مطالبہ کیا ہے۔

20161101_105414

20161101_105359

تبصرے

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں