مسلم لیگ ن تا حال کسی نامزد امیدوار براے چیئرمین ضلع کونسل اٹک کا اعلان نہ کرسکی

فتح جنگ (صداقت محمود مٹھو سے)
ضلع کونسل اٹک کے چیئرمین کیلئے (ق) لیگ اور (ن)لیگ میں کانٹے دار مقابلہ متوقع ہے میجر گروپ کی طرف سے توسابق ضلع ناظم میجر طاہر صادق کی صاحبزادی سابق ایم این اے ایمان طاہر ضلع چیئرمین کی امیدوار ہوں گی مگر مخصوص نشستوں پرانتخاب سمیت بلدیاتی الیکشن کے تقریباتمام مراحل بخیر و خوبی طے پانے کے باوجود (ن) لیگ ضلع اٹک میں تا حال اپنے امیدوار برائے ضلع چیئرمین کی نامزدگی میں ناکام نظر آتی ہے

چیئرمین کے امیدوار کی نامزدگی میں تاخیر اور امیدواروں کے درمیان تناؤ کا فائدہ میجر گروپ کو ہوسکتا ہے –
ذرائع کے مطابق اس کی بنیادی وجہ ن لیگی کیمپ کے تمام امیدواران برائے ڈسٹرکٹ چیئر مین میں شدید سیاسی کشمکش کا ہونا بتایا جاتا ہے کوئی چمک پر یقین رکھتا ہے تو کوئی تجربے اور نطریاتی لیگی ہونے کا دعویدار ہے اور کوئی کسی سیاسی قد آور کے قریبی تعلق کی بنیاد پر اس منصب کیلئے میدان میں موجود ہے –
یہ بات یہاں ہی ختم نہیں ہو جاتی حکومتی پارٹی کے وائس ضلع چیئرمین کے امیدواران کی تعداد بھی کسی طور کم نہیں کئی یو سی چیئرمین اپنی اپنی لابنگ کرتے نظر آتے ہیں ہر ایک کے مطابق کسی کو دس نمائندگان کی حمایت حاصل،تو کوئی پندرہ کی ووٹ اپنی جیب میں لئے ہونے کا دم بھرتا ہے اور دلچسپ بات یہ بھی ہے کہ ان میں سے ہر کوئی آخری دم تک اپنے حق کیلئے کھڑا ہونے کا عزم ظاہر کرتا ہے-
اس گھمبیر مسئلہ سے نمٹنے کیلئے کچھ عرصہ قبل (ن) لیگ کی اعلیٰ قیادت کی جانب سے ضلع بھرکے منتخب قومی و صوبائی اسمبلی ارکان پر مشتمل ایک خصوصی کمیٹی کی تشکیل بھی دی گئی لیکن ذاتی و سیاسی اختلافات کیساتھ ساتھ زمینی حقائق اس قدر پیچیدہ ہیں کہ تا حال اس معاملے پر کوئی پیش رفت نہ ہو سکی
واقفان حال کا تو کہنا ہے کہ موجودہ حالات کے تناظر میں ن لیگ کا متفقہ امیدوار برائے ضلع چیئرمین و وائس چیئرمین لانا کسی معجزہ سے کم نہیں ہو گا- ضلع چیئرمین کے ٹکٹ کیلئے کشمکش اور تناؤ کا فائدہ اٹھانے کیلئے (ق) لیگ میجر گروپ کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دے گا پی ٹی آئی کے ساتھ اتحاد میں مخصوص نشستوں کے انتخابات کے دوران ہونے والی کمی بیشی کو دور کرنے کیلئے بھی میجر گروپ بھر پور کوشش کرے گادوسری جانب مسلم لیگ (ن) بھی ضلع چیئرمین کو حاصل کرنے کیلئے سر دھڑ کی بازی لگائے گی موجودہ صورتحال میں وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان کے بھانجے اور پیپلز پارٹی کے سابق وفاقی وزیر سردار سلیم حیدر کے کزن سردار احسن علی خان ضلع چیئرمین کے فیورٹ امیدوار ہو سکتے ہیں انہیں پیپلز پارٹی،کوٹ فتح خان گروپ،مالکان پنڈی گھیب،بالڑہ گروپ،پی ٹی آئی کے ملک سہیل کمڑیال سمیت کئی دھڑوں کی طرف سے بھی حمایت کی پیشکش ہے سردار ممتاز حسین ماجھیا بھی ٹکٹ کیلئے پُرامید نظر آرہے ہیں مسلم لیگ (ن) تحصیل فتح جنگ کے جنرل سیکرٹری حاجی ملک ریاست سدریال بھی مضبوط امیدوار کے طور پر میدان میں موجود ہیں مسلم لیگ (ن) اور (ق) پی ٹی آئی اتحاد کا مقابلہ انتہائی ٹف ہو گا حکومتی اثر رسوخ کے ساتھ ساتھ جوڑ توڑ کی سیاست اپنا کام دیکھا سکتی ہے۔

تبصرے

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں