کیلیفورنیا میں بند ٹوٹنے کا خطرہ، ایک لاکھ 80 ہزار افراد کو علاقہ چھوڑنے کا حکم

امریکی ریاست کیلیفورنیا کے شمالی علاقے میں شدید بارش کی وجہ سے ملک کے سب سے اونچے ڈیم کے ہنگامی سپل وے کو نقصان پہنچا ہے جس کے بعد حکام نے ایک لاکھ 80 ہزار افراد کو اپنے مکانات چھوڑ کر محفوظ مقام پر منتقل ہونے کا حکم دیا ہے۔
حکام کا کہنا ہے کہ 770 فٹ بلند اوروول ڈیم سے پانی کے اخراج کا ہنگامی راستہ ٹوٹنے کے قریب ہے۔
شدید بارشوں کے بعد اوروول ڈیم بھر چکا ہے اور وہ کہیں کہیں سے چھلکنے بھی لگا تھا تاہم اب پانی کا اخراج بند ہو چکا ہے۔
حکام کے مطابق پانی کا اخراج رکنے کے باوجود عوام کے انخلا کا حکم برقرار ہے۔
سیکرامینٹو سے 65 میل کے فاصلے پر واقع اوروول ڈیم کی 50 سالہ تاریخ میں ایسا پہلی بار ہوا ہے کہ اسے ایسی ہنگامی صورت حال کا سامنا ہے۔
کئی برسوں کی شدید خشک سالی کے بعد ریاست کیلیفورنیا میں تیز بارش اور برف باری کے نتیجے میں پانی کے ذخائر میں پانی کی سطح مسلسل اونچی ہو رہی ہے۔

کیلیفورنیا کے آبی ذخائر کے محکمے نے اتوار کو بتایا کہ وہ جھیل کو سکھانے کے لیے اس کے نکاسی کے صدر مقام سے فی سیکنڈ ایک لاکھ مکعب فٹ پانی چھوڑ رہے ہیں۔
سماجی رابطے کی سائٹ پر پوسٹ کیے جانے والے اپنے ایک پیغام میں جھیل کے علاقے کے شیرف نے وہاں کے رہائشیوں سے اپنے مکانات خالی کرنے کے لیے کہا ہے اور یہ بھی کہا ہے کہ یہ کوئی مشق نہیں ہے بلکہ ناگہانی صورت حال ہے۔
انجینیئروں نے جب یہ دیکھا کہ پانی کی نکاسی کے ایک مقام سے کنکریٹ کا ایک بڑا حصہ غائب ہے تو انھوں نے جمعرات سے پانی چھوڑنا شروع کیا۔
16 ہزار آبادی پر مشتمل اوروول کے قصبے کے مکینوں کو مزید شمال کی جانب نقل مکانی کنے کے لیے کہا گیا ہے جبکہ دوسرے متاثرہ شہروں کی جانب سے ان شہروں کے حکام کی جانب سے الرٹ جاری کیا جائے گا۔

تبصرے

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں