اسلام آباد : احتساب عدالت میں بدمزگی، سماعت بغیر کارروائی کے ملتوی

سماعت کے قبل جوڈیشل کمپلیکس کے باہر وکلا پر ہونے والے تشدد کے بعد وکلا کی بڑی تعداد کمرہ عدالت میں داخل ہونے میں کامیاب ہو گئی تھی۔ انھوں نے احتساب عدالت کے جج محمد بشیر چوہدری کو بتایا کہ جب عدالت نے وکلا کی آمد پر پابندی نہیں کی تو انھیں اندر کیوں نہیں آنے دیا گیا۔

نامہ نگار کے مطابق کمرہِ عدالت کے اندر بھی وکلا کا آپس میں جھگڑا ہو گیا۔ عدالت میں نعرے بازی اور شور شرابے کے بعد مقدمے کی باقاعدہ سماعت ہونے سے پہلے ہی سماعت 19 اکتوبر تک ملتوی کر دی گئی۔
احتساب عدالت میں نواز شریف اور ان کے بچوں کے خلاف تین مقدمات میں فردِ جرم عائد کیا جانا تھی تاہم سماعت بغیر کسی کارروائی کے ملتوی کر دی گئی۔ مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کے اندر احاطہِ عدالت میں داخل ہونے کے بعد جوڈیشل کمپلیکس کے دروازے بند کر دیے گئے تھے۔ تاہم عدالت کے اندر وکلا کی بڑی تعداد کے احتجاج کے باعث سماعت ملتوی کر دی گئی۔ مریم نواز واپس جا چکی ہیں۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کی بیٹی مریم نواز اور ان کے شوہر محمد صفدر عدالت میں پیشی کے لیے جوڈیشل کمپلیکس اسلام آباد پہنچ چکے ہیں۔ دونوں الگ الگ گاڑیوں میں عدالت پہنچے۔ میڈیا کے نمائندوں نے محمد صفدر سے بات کرنے کی کوشش کی لیکن انھوں نے میڈیا سے بات نہیں کی۔

تبصرے

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں