ریو میں 31 ویں اولمپکس مقابلوں کا باقاعدہ آغاز

31 ویں اولمپکس کی افتتاحی تقریب برازیل کے شہر ریو ڈی جنیرو میں ماراکانا سٹیڈیم میں شروع ہو گئی ہے۔

دنیا کے 206 ممالک کے ایتھلیٹس اور پناہ گزینوں کی ایک ٹیم برازیل میں ہونے والے ان عالمی مقابلوں میں حصہ لےگی جنھیں ایک اندازے کے مطابق تین ارب افراد ٹی وی پر دیکھیں گے جب کہ اولمپکس دیکھنے کے لیے پانچ لاکھ سیاحوں کی برازیل آمد متوقع ہے۔

پانچ سے 21 اگست تک منعقد ہونے والے ان مقابلوں میں دنيا بھر سے 10 ہزار کھلاڑی حصہ لیں گے۔

گالف 112 سال بعد ان مقابلوں کا حصہ بنا ہے جب کہ رگبی سیون کو ان مقابلوں میں پہلی بار شامل کیا گیا ہے
گالف 112 سال بعد ان مقابلوں کا حصہ بنا ہے جب کہ رگبی سیون کو ان مقابلوں میں پہلی بار شامل کیا گیا ہے

اس مرتبہ ان مقابلوں میں پاکستان کا سات رکنی دستہ شرکت کر رہا ہے جس میں دو ایتھلیٹ، دو تیراک، دو نشانہ باز اور جوڈو کا ایک کھلاڑی شامل ہے۔

پاکستان کی ہاکی ٹیم پہلی بار اولمپکس کے لیے کوالیفائی نہیں کر سکی ہے۔

یہ پہلا موقع ہو گا جب کوسوو اور جنوبی سوڈان جیسے ممالک ان کھیلوں میں شریک ہوں گے جب کہ ریو اولمپکس میں اس بار گالف اور رگبی مقابلوں کی واپسی ہوئی ہے۔

گالف 112 سال بعد ان مقابلوں کا حصہ بنا ہے جب کہ رگبی سیون کو ان مقابلوں میں پہلی بار شامل کیا گیا ہے۔

ریو اولمپکس میں پناہ گزینوں کی ٹیم اولمپک کے جھنڈے تلے ان مقابلوں میں حصہ لے گی۔ دس ارکان پر مشتمل اس ٹیم میں جنوبی سوڈان سے پانچ، شام سے دو، ڈیموکریٹک رپبلک آف کانگو سے دو اور ایتھوپیا کا ایک رکن شامل ہے۔

امریکہ کا اولمپک دستہ 554 ایتھلیٹس پر مشتمل ہے جو ان مقابلوں میں حصہ لینے والا سب سے بڑا دستہ ہے۔

نیپال کی 13 سالہ تیراک گوریکا سنگھ ریو اولمپکس میں حصہ لینے والے سات رکنی نیپالی دستے کا حصہ ہیں اور وہ ان اولمپکس میں حصہ لینے والی سب سے کم عمر ایتھلیٹ بھی ہیں۔

ریو اولمپکس کی افتتاحی تقریب میں 300 رقاص اور 5,000 رضاکار حصہ لیں گے۔ برازیل کی سپر ماڈل جیزیل بنشن اور برطانیہ کے ڈیم جوڈی ڈینچ افتتاحی تقریب میں شرکت کریں گے۔

برازیل میں معاشی اور سیاسی بحران کی وجہ سے ان کھیلوں کی مخالفت ہوتی رہی ہے۔ بدھ کو جب اولمپک مشعل ریو پہنچی تو مشعل کے جلوس کو ایک ہجوم کی طرف سے مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا۔

160707034051_troops_rio2016_512x288_afp_nocredit

ریو اولمپکس مقابلوں کے مقامات کی سکیورٹی کے لیے دنیا کے 55 ممالک سے 85,000 سکیورٹی اہلکاروں کو تعینات کیا جائے گا۔

یہ تعداد سنہ 2012 کے لندن اولمپکس سے دگنی ہے۔ ان کھیلوں کی سکیورٹی کے لیے 200 کلو میٹر لمبی سکیورٹی باڑ بھی استعمال کی جا رہی ہے۔

ریو اولمپکس کے لیے بنائے گئے اولمپک گاؤں اور کشتی رانی کے مقابلوں کے مقامات کے حوالے سے کچھ مسائل رہے ہیں۔

آسٹریلیا کی ٹیم نے ابتدا میں اولمپک گاؤں میں منتقل ہونے سے انکار کر دیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ وہاں، بجلی، گیس اور پانی لیکیج کے مسائل ہیں۔

ایسا پہلی بار نہیں کہ اولمپک کے میزبان شہر کو ان مقابلوں کی تیاریوں کے حوالے سے تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہو تاہم اب انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی کا کہنا ہے ’ریو، دنیا کا استتقبال کرنے کے لیے تیار ہے۔‘

برازیل مچھروں کے ذریعے پھیلنے والے زِیکا وائرس کا مرکز بھی ہے۔ یہ اتنا احساس مسئلہ تھا کہ عالمی ادارۂ صحت نے حاملہ خواتین کو برازیل کا سفر نہ کرنے کی سفارش بھی کی تھی۔

کھیلوں کے 306 مقابلوں میں کوئی بھی مقابلہ 100 میٹر کی دوڑ سے زیادہ بڑا نہیں ہوگا جہاں لوگ دنیا کے تیز تیرین انسان یوسین بولٹ کو دیکھیں گے
کھیلوں کے 306 مقابلوں میں کوئی بھی مقابلہ 100 میٹر کی دوڑ سے زیادہ بڑا نہیں ہوگا جہاں لوگ دنیا کے تیز تیرین انسان یوسین بولٹ کو دیکھیں گے

بڑے مقابلے

اولمپکس کے مقابلے ریو میں 32 مقامات پر منعقد کیے جائیں گے جب کہ فٹ بال میچز دیگر شہروں میں بھی رکھے گئے ہیں۔

کھیلوں کے 306 مقابلوں میں کوئی بھی مقابلہ 100 میٹر کی دوڑ سے زیادہ بڑا نہیں ہوگا جہاں لوگ دنیا کے تیز تیرین انسان یوسین بولٹ کو دیکھیں گے۔

جمیکا کے ایتھلیٹ کا ارادہ ہے کہ وہ 100 میٹر، 200 میٹر اور 400 میٹر کی ریلے ریس تیسری مرتبہ بھی جیت جائیں۔ اس مرتبہ ان کے ساتھ کڑے مقابلے میں امریکہ کے سپرنٹر جسٹن گیلٹن ہیں۔

امریکہ کے تیراک مائیکل فیلپ اس مرتبہ 18 سونے کا تمغہ جیتے کی کوشش کریں گے۔

امریکہ کی ہی ٹینس کی کھلاڑی سرینا ولیمز کی کوشش ہوگی کے وہ پانچواں اولمپک میڈل حاصل کریں جب کہ امریکہ کی باسکٹ بال ٹیم کی نظر لگا تار تیسرے گولڈ میڈل پر ہوگی۔

تبصرے

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں